ھمارے خون کے پیاسے

Discussion in 'Poetry' started by Akram Naaz, Dec 25, 2015.

  1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔
  2. آئی ٹی استاد کے لیے ٹیم ممبرز کی ضرورت ہے خواہش مند ممبرز ایڈمن سے رابطہ کریں
    Dismiss Notice
  1. Akram Naaz
    Offline

    Akram Naaz <font size="4" color="Orange">Anti Spam</font> Staff Member
    • 63/65

    ﮨﻤﺎﺭﮮ ﺧﻮﻥ ﮐﮯ ﭘﯿﺎﺳﮯ ﭘﺸﯿﻤﺎﻧﯽ ﺳﮯ ﻣﺮ
    ﺟﺎﺋﯿﮟ
    ﺍﮔﺮ ﮨﻢ ﺍﯾﮏ ﺩﻥ ﺍﭘﻨﯽ ﮨﯽ ﻧﺎﺩﺍﻧﯽ ﺳﮯ ﻣﺮ
    ﺟﺎﺋﯿﮟ
    ﺍﺫﯾﺖ ﺳﮯ ﺟﻨﻢ ﻟﯿﺘﯽ ﺳﮩﻮﻟﺖ ﺭﺍﺱ ﺁﺗﯽ ﮨﮯ
    ﮐﻮﺋﯽ ﺍﯾﺴﯽ ﭘﮍﮮ ﻣﺸﮑﻞ ﮐﮧ ﺁﺳﺎﻧﯽ ﺳﮯ ﻣﺮ
    ﺟﺎﺋﯿﮟ
    ﺍﺩﮬﻮﺭﯼ ﮨﯽ ﻧﻈﺮ ﮐﺎﻓﯽ ﮨﮯ ﺍﺱ ﺁﺋﯿﻨﮧ ﺩﺍﺭﯼ ﭘﺮ
    ﺍﮔﺮ ﮨﻢ ﻏﻮﺭ ﺳﮯ ﺩﯾﮑﮭﯿﮟ ﺗﻮ ﺣﯿﺮﺍﻧﯽ ﺳﮯ ﻣﺮ
    ﺟﺎﺋﯿﮟ
    ﺑﻨﺎ ﺭﮐﮭﯿﮟ ﮨﯿﮟ ﺩﯾﻮﺍﺭﻭﮞ ﭘﮧ ﺗﺼﻮﯾﺮﯾﮟ ﭘﺮﻧﺪﻭﮞ
    ﮐﯽ
    ﻭﮔﺮﻧﮧ ﮨﻢ ﺗﻮ ﺍﭘﻨﮯ ﮔﮭﺮ ﮐﯽ ﻭﯾﺮﺍﻧﯽ ﺳﮯ ﻣﺮ
    ﺟﺎﺋﯿﮟ
    ﺍﮔﺮ ﻭﺣﺸﺖ ﮐﺎ ﯾﮧ ﻋﺎﻟﻢ ﺭﮨﺎ ﺗﻮ ﻋﯿﻦ ﻣﻤﮑﻦ ﮨﮯ
    ﺳﮑﻮﮞ ﺳﮯ ﺟﯿﺘﮯ ﺟﯿﺘﮯ ﺑﮭﯽ ﭘﺮﯾﺸﺎﻧﯽ ﺳﮯ ﻣﺮ
    ﺟﺎﺋﯿﮟ
    ﮐﮩﯿﮟ ﺍﯾﺴﺎ ﻧﮧ ﮨﻮ ﯾﺎﺭﺏ! ﮐﮧ ﯾﮧ ﺗﺮﺳﮯ ﮨﻮﺋﮯ
    ﻋﺎﺑﺪ
    ﺗﺮﯼ ﺟﻨﺖ ﻣﯿﮟ ﺍﺷﯿﺎﺀ ﮐﯽ ﻓﺮﺍﻭﺍﻧﯽ ﺳﮯ ﻣﺮ
    ﺟﺎﺋﯿﮟ
     
  2. m Riaz
    Offline

    m Riaz Newbi
    • 6/8

    bahut hi lajwab
     
  3. Assad Ali
    Offline

    Assad Ali Newbi
    • 6/8

    Nice sharing
     
  4. ahbbaloch
    Offline

    ahbbaloch New Member
    • 1/8

    بہت عمدہ

    Sent from my XT1080 using Tapatalk
     

Share This Page