A Refreshing Ghazal: “dil Mein Ik Leher”

Discussion in 'Songs Lyrics' started by PakArt, Feb 15, 2017.

  1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔
  2. آئی ٹی استاد کے لیے ٹیم ممبرز کی ضرورت ہے خواہش مند ممبرز ایڈمن سے رابطہ کریں
    Dismiss Notice
  1. PakArt
    Online

    PakArt ITUstad dmin Staff Member
    • 83/98


    دل میں اک لہر سی اٹھی ہے ابھی
    dil mein ik leher si uthi hai abhi
    A kind of wave has risen in my heart right now
    کوئی تازہ ہوا چلی ہے ابھی
    koi taaza hava chali hai abhi
    Some fresh breeze has blown by right now

    شور برپا ہے خانۂ دل میں
    shor barpa hai khaana-e-dil mein
    An uproar is rising in the cockles of my heart;
    کوئی دیوار سی گری ہے ابھی
    koi deevaar si giri hai abhi
    Some kind of wall has fallen right now

    بھری دنیا میں جی نہیں لگتا
    bhari dunya mein ji naheen lagta
    My heart is not satisfied in this crowded world;
    جانے کس چیز کی کمی ہے ابھی
    jaane kis cheez ki kami hai abhi
    I wonder what is lacking right now

    و شریکِ سخن نہیں ہے تو کیا
    tu shareek-e-sukhan naheen hai to kya
    So what if you are not joining me in conversation?
    ہم سخن تیری خامشی ہے ابھی
    ham-sukhan teri khaamushi hai abhi
    Your silence is conversing with me right now

    یاد کہ بے نشاں جزیروں سے
    yaad ke be-nishaan jazeeron se
    Is it my memory, or is it from traceless islands that
    تیری آواز آ راہی ہے ابھی
    teri aavaaz aa rahi hai abhi
    Your voice is reaching me right now?

    شہر کی بے چراغ گلیوں میں
    sheher ki be-charaagh galiyon mein
    Through the unlit streets of the city,
    زندگی تجھ کو ڈھونڈتی ہے ابھی
    zindagi tujh ko dhoondti hai abhi
    Life is searching for you right now

    سو گئے لوگ اُس حویلی کے
    so gaye log us haveli ke
    The people of that house have fallen asleep,
    ایک کھڑکی مگر کھلی ہے ابھی
    ek khirki magar khuli hai abhi
    But one window remains open right now

    تم تو یارو ابھی سے اٹھ بیٹھے
    tum to yaaro abhi se uth baithe
    Friends, you have already risen and sat down,
    شہر میں رات جاگتی ہے ابھی
    sheher mein raat jaagti hai abhi
    But in the city, the night remains awake right now

    وقت اچھا بھی آئے گا ناصرؔ
    waqt achcha bhi aaye ga Naasir
    Good times, too, will come O Nasir!
    غم نہ کر زندگی پڑی ہے ابھی
    gham na kar zindagi pari hai abhi
    Don’t grieve, your whole life is ahead of you right now!
     

Share This Page