1. السلام علیکم
    آئی ٹی استاد ڈاٹ کام وزٹ کرنے کا شکریہ۔ ہم آپکو خوش آمدید کہتے ہیں۔ فورم کے کسی بھی حصے کو استعمال میں لانے جیسے پوسٹنگ کرنے، کوئی تھریڈ دیکھنے یا لکھنے کسی بھی ممبر سے رابطہ کرنے کے لئے اور فورم کے دیگر آلات وغیرہ کا استعمال کرنے کے لئے آپکا رجسٹر ہونا ضروری ہے۔ رجسٹر ہونے کے لئے یہاں کلک کریں۔ رجسٹریشن حاصل کرنا بالکل آسان اور بالکل مفت ہے۔

میں آئینے کے لیے آئینہ اٹھا لایا

Discussion in 'Poetry' started by IQBAL HASSAN, Jul 22, 2017.

  1. IQBAL HASSAN

    IQBAL HASSAN Management

    میں آئینے کے لیے آئینہ اٹھا لایا
    کہ بوجھ جتنا بھی مجھ سے اٹھا، اٹھا لایا

    مری بلا سے کوئی کچھ بھی اب اٹھا لاۓ
    میں اپنے حصے کے کرب و بلا اٹھا لایا

    تھکن سے چور ہوں اب تک سمجھ نہیں آتا
    میں تیرے شہر سے ایسا بھی کیا اٹھا لایا

    چراغ جلتا ہوا چھوڑ کر گیا تھا ابھی
    اک اور ہجر میں بعد از دعا اٹھا لایا

    میں اس کی جان کا دشمن کہیں نہ بن جاؤں
    وہ کون ہے جو مرا نقش ِ پا اٹھا لایا

    میں پہلے دیر تلک دیکھتا رہا اس کو
    پھر اس کی بزم سے صبر و رضا اٹھا لایا

    وہ مجھ سے ملنے جب آیا تو جلد بازی میں
    وہ پہلا عشق نہیں دوسرا اٹھا لایا

    جب اس کے ہاتھ مرا جرم لگ سکا نہ کوئ
    مری حیات کا اک سانحہ اٹھا لایا

    سنا ہے تجھ کو بھی نسبت ہے خاص لوگوں سے
    سو تیرے پاس ترا تذکرہ اٹھا لایا

     
  2. muzafar ali

    muzafar ali Legend

    Nice sharing

    Sent from my QMobile L15 using

    Hello guest, Thank you for Register or you log to see the links!

     
  3. Admin

    Admin Cruise Member Staff Member

Share This Page